تعارف امیر اہلسنت

ابتدا میں بابُ الاسلام (سندھ) کے مشہور شہر حیدرآبادمیں قِیام فرمایا۔ کچھ عرصہ وہاں رہنے کے بعد بابُ الْمدینہ (کراچی) میں تشریف لائے اور یہیں سُکُونَتْ پذیرہوئے ۔

والدِ محترم

          امیرِ اَہلسنّتدامت برکاتہم العالیہکے والدِبُزُرگوارحاجی عبدالرَحمن قادِری علیہ رحمۃ اللہ الھادی باشرع اور پرہیز گارآدمی تھے ۔ اکثر نگاہیں نیچی رکھ کر چلا کرتے تھے ، انہیں بہت سی احادیث زبانی یاد تھیں۔ دنیاوی مال ودولت جمع کرنے کا لالچ نہیں تھا۔آپ علیہ رحمۃ اللہ الھادی سلسلۂ عالیہ قادِریہ  میں بیعت تھے۔

قصیدۂ غوثیہ کی برکت:

           1979ء میں جب شَیخِ طریقت امیرِاَہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ ’’کولمبو‘‘ تشریف لے گئے تو وہاں کے لوگوں کو والدصاحب سے بَہُت متأثر پایاکیونکہ انہوں نے وہاں کی عالیشان حَنَفی میمن مسجد کے انتظامات سنبھالے تھے اور اس مسجد کی کافی خدمت بھی کی تھی۔کولمبو میں قیام کے دوران امیرِ اَہلسنّت دامت برکاتہم العالیہکے خالو نے دورانِ گفتگو آپ کو بتایا کہ ’’ میں نے خود اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے کہ جب کبھی چار پائی پر بیٹھ کر آپ کے والد صاحب رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ ’’قصیدئہ غوثیہ‘‘  پڑھتے تو ان کی چار پائی زمین سے بلند ہو جاتی تھی۔‘‘(سبحان اللہ عزوجل)

 

سفرِ حج کے دوران انتقال:

           امیرِ اَہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ عالَمِ شِیْر خوارگی ہی میں تھے کہ آپ کے والد ِ


 

 

Index