تعارف امیر اہلسنت

مجلسِ مکتوبات و تعویذات:

       جیسا کہ گزرا کہ سلف صالحین قدس سرھم کی طرح امیرِ اَہلسنّتدامت برکاتہم العالیہکے قلبِ مبارَک میں بھی امت کی خیر خواہی کا دریائے بیکراں موجزن ہے۔اوائل میں آپ دامت برکاتہم العالیہ گھروں اور اسپتالوں میں جاکر مریضوں کودم کرتے اور تعویذات عنایت فرماتے تھے۔تقریباً 1972میں باب المدینہ (کراچی) میں آنکھوں کی ایک پُراسرار بیماری پھیلی، اس سے شاید ہی کوئی محفوظ رہا ہو۔  آپ دامت برکاتہم العالیہ نے مریضوں کی آنکھوں پر فی سبیل اﷲ دَم کرنا شروع کردیا، اﷲعزوجل کے کرم سے لوگ صحت یاب ہونے لگے ، یہاں تک کہ اخبار میں نمایاں طور پر یہ خبر شائع ہوئی کہ آنکھوں کی پُراسرار بیماری جس کے علاج میں ڈاکٹرناکام ہوچکے ہیں وہ محمد الیاس قادری(دامت برکاتہم العالیہ)  نامی ایک شخص کے دَم  سے ٹھیک ہونے لگی ہے۔ پھر کیا تھا لوگ دور دور سے آنے لگے اور مریضوں کی قطاریں لگ جاتیں اور آپ دامت برکاتہم العالیہ  باری باری دَم فرماتے۔

        بالآخرآپ دامت برکاتہم العالیہ  نے اُمّت ِ سرکارصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہٖ وسلم کی غمخواری کے مقدس جذبے کے تحت  مجلسِ مکتوبات و تعویذات عطاریہ  بنائی۔جس کے تحت دکھیارے مسلمانوں کا تعویذات کے ذَرِیعے فی سبیل اللہ عِلاج کیا جاتا ہے نیز استخارہ کرنے کا سلسلہ بھی ہے۔ روزانہ ہزاروں مسلمان اس سے مستفیض ہوتے ہیں۔الحمدللہ عزوجل اس وقت مجلس کے تحت امیرِ اَہلسنّتدامت برکاتہم العالیہکی جانب


 

 

Index