تعارف امیر اہلسنت

نیکی کی دعوت کا جذبہ

           امیرِ اہلِسنّت دامت برکاتہم العالیہ اصلاح کرنے کے معاملے میں بے حد مُتَحَرِّک ہیں۔ آپ دامت برکاتہم العالیہکسی بھی خلاف ِشرع یا خلافِ سنّت کام کو دیکھ کر خاموش نہیں رہ سکتے بلکہ فوراً اَحسن طریقے سے سامنے والے کی اصلاح فرمادیتے ہیں۔

کلمۂ کفر سے توبہ کروائی:

          بہت عرصہ قبل سولجر بازار کے رہائشی اسلامی بھائی امیرِ اہلِسنّت دامت برکاتہم العالیہ سے ملاقات کی غرض سے حاضر ہوئے تو کسی وجہ سے ملاقات نہ ہوسکی۔ انتہائی مایوسی کے عالم میں ان کے منہ سے کچھ نازیباکلمات اداہوگئے ۔ جب آپ دامت برکاتہم العالیہکو ان کلمات کے بارے میں بتایا گیا تو آپ نے (کچھ اس طرح) ارشادفرمایا’’ یہ تو کلمۂ کفر ہے ۔‘‘اس کے بعد اس اسلامی بھائی کی شدومد سے تلاش شروع کردی گئی ۔ تقریباً دو گھنٹے کی تلاش کے بعد بالآخر امیرِ اہل ِ سنت دامت برکاتہم العالیہ اس اسلامی بھائی کے گھر جا پہنچے اور انفرادی کوشش کرتے ہوئے اسے کلمۂ کفر کے بارے میں بتایا اور توبہ کی ترغیب دلائی ۔ الحمدللہ عزوجل ! اس اسلامی بھائی نے آپ کی انفرادی کوشش کی برکت سے توبہ کرکے تجدیدِ ایمان کر لی۔

 نمازی کی اِصلاح:

                   ایک مرتبہ امیرِ اہلِسنّت دامت برکاتہم العالیہ کے درِ دولت میں ایک اسلامی بھائی نماز پڑھ رہے تھے۔ وہ سجدے کی حالت میں تھے کہ اچانک آپ دامت برکاتہم العالیہنے دیکھا کہ ان کے پاؤں کی انگلیاں ٹھیک سے زمین پر نہیں لگی ہوئیں۔


 

 

Index