تعارف امیر اہلسنت

فیضان مدینہ (صحرائے مدینہ، ٹول پلازہ، سپر ہائی وے باب المدینہ کراچی) کے تعمیری کام کا آغاز ہوا۔

سنت کی بہار آئی صحرائے مدینہ میں

رحمت کی گھٹا چھائی صحرائے مدینہ میں

ایثار وسخاوت

          ایک مرتبہ امیرِ اہلِسنّت دامت برکاتہم العالیہ سے ان کے ایک عزیز نے (بطورِ برکت )

ان کے استعمال کا عصا مانگا تو آپ نے فرمایا :’’ایک کی بجائے دو لے لیجئے۔‘‘جواباً انہوں نے واقعی دونوں عصا لے لئے ۔ ان صاحب کے بیٹے نے آپ سے پوچھا کہ آپ کے استعمال کا عصا کون سا ہے؟( تاکہ ایک عصا واپس کیا جاسکے )لیکن آپ نے فرمایا کہ میں دونوں عصا لے لینے کی اجازت دے چکا ہوں نیز میں اپنی پسندیدہ شے راہِ خدا عزوجل میں خرچ کرنے کاثواب   کمانا چاہتا ہوں ، قرآن پاک میں ہے ،’’لَنْ تَنَالُوا الْبِرَّ حَتّٰی تُنْفِقُوْا مِمَّا تُحِبُّوْنَترجمۂ کنزالایمان : تم ہرگز بھلائی کو نہ پہنچو گے جب تک راہِ خد ا میں اپنی پیاری چیز نہ خرچ کرو ۔۴،اٰل عمران :۹۲)

 عبادت وریاضت

          الحمدللہ عزوجل! شیخِ طریقت امیرِ اہلِسنّت دامت برکاتہم العالیہ کو آنکھ کھولتے ہی گھر میں پنجگانہ نمازوں کی ادائیگی اورماہِ رمضان کے روزے پابندی سے رکھنے کا مدنی ماحول ملا ۔ جیسے ہی داڑھی نکلی‘ رکھ لی حالانکہ اس دور میں شاذو نادر ہی کوئی نوجوان داڑھی والا نظرآتاتھا ۔اس کے علاوہ آپ نے زُلفیں رکھنے کی سنت پر بھی عمل کیا۔


 

 

Index